متکبرانہ لباس پہننے پر عذاب - محمد رفیع مفتی

متکبرانہ لباس پہننے پر عذاب

 

(۷۹)

عَنْ عَبْدِ اللّٰہِ بْنِ عُمَرَ قَالَ: قَالَ رَسُوْلُ اللّٰہِ صَلَّی اللّٰہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ : مَنْ لَبِسَ ثَوْبَ شُہْرَۃٍ فِی الدُّنْیَا أَلْبَسَہُ اللّٰہُ ثَوْبَ مَذَلَّۃٍ یَوْمَ الْقِیَامَۃِ ثُمَّ أَلْہَبَ فِیْہِ نَارًا.(ابن ماجہ، رقم ۳۶۰۷)
حضرت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہما سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: جس نے دنیا میں اپنی بڑائی ظاہر کرنے کے لیے کوئی لباس پہنا، اللہ تعالیٰ قیامت کے دن اسے ذلت کا لباس پہنائے گااور پھر اس میں آگ بھڑکا دے گا۔

توضیح:

تکبر اپنی حقیقت میں بندگی کی نفی ہے ۔ اس کا اظہار خواہ کسی صورت میں بھی ہو، یہ خدا کو سخت ناپسندہے۔ انسان خدا کا بندہ ہے، اس کے لیے یہی زیبا ہے کہ وہ اس کی زمین پر اس کا بندہ بن کر جیے۔
اظہار تکبر کی ایک شکل یہ ہوتی ہے کہ انسان فاخرانہ لباس کے ذریعے سے دوسروں پر اپنی بڑائی ظاہر کرتا ہے۔ اس حدیث میں ہمیں یہ بتایا گیا ہے کہ دنیا میں جو شخص دوسروں پر اپنی بڑائی ظاہر کرنے کے لیے اس طرح کا کوئی فاخرانہ لباس پہنے گا، اللہ تعالیٰ قیامت کے دن اسے ایسا لباس پہنائے گا جو دوسروں کی نگاہ میں اس کی ذلت کا باعث ہو گا اور پھر اس لباس کے اندر آگ بھڑکا دی جائے گی تاکہ وہ اپنے جرم کا پورا پورا بدلہ پائے۔

------------------------------

 

تاریخ: ستمبر 2011
بشکریہ: محمد رفیع مفتی 
مصنف : محمد رفیع مفتی
Uploaded on : Aug 16, 2016
561 View